نفرت انگیز تقاریر:اتراکھنڈ حکومت کو سپریم کورٹ کا نوٹس

Story by  ایم فریدی | Posted by  [email protected] | 2 Years ago
نفرت انگیز تقاریر:اتراکھنڈ حکومت کو سپریم کورٹ کا نوٹس
نفرت انگیز تقاریر:اتراکھنڈ حکومت کو سپریم کورٹ کا نوٹس

 

 

نئی دہلی : آواز دی وائس

 سپریم کورٹ نے بدھ کے روز ریاست اتراکھنڈ  حکومت کو ایک پی آئی ایل میں نوٹس جاری کیا ہے جس میں ہریدوار دھرم سنسد کانفرنس کے سلسلے میں مجرمانہ کارروائی کا مطالبہ کیا گیا ہے جہاں مسلمانوں کے خلاف نفرت انگیز تقاریر کی گئی تھیں۔چیف جسٹس آف انڈیا این وی رمنا، جسٹس سوریہ کانت اور جسٹس ہیما کوہلی پر مشتمل بنچ نے صحافی قربان علی اور سینئر ایڈوکیٹ انجنا پرکاش (پٹنہ ہائی کورٹ کی سابق جج) کی طرف سے دائر پی آئی ایل پر نوٹس جاری کیا۔

جب یہ معاملہ اٹھایا گیا تو عرضی گزاروں کی طرف سے پیش ہونے والے سینئر ایڈوکیٹ کپل سبل نے بنچ سے درخواست کی کہ وہ ہریدوار کانفرنس کے دوران کی گئی اشتعال انگیز تقاریر کی نقل پڑھے۔ سبل نے بنچ سے کہاکہ "میں اسے آپ کے سامنے نہیں پڑھنا چاہتا، میں سنسنی خیزی نہیں کرنا چاہتا، لیکن مہربانی کرکے اسے پڑھیں"۔ جب بنچ نے کہا کہ وہ نوٹس جاری کر رہی ہے۔ توسبل نے عرض کیا کہ مرکزی حکومت کو بھی نوٹس کی ضرورت ہے کیونکہ تحسین پونا والا کیس میں سپریم کورٹ کی طرف سے جاری کردہ ہدایات کے مطابق موب لنچنگ کو روکنے کے لئے نوڈل افسروں کا تقرر کرنا اس کی ذمہ داری ہے۔

سبل نے یہ کہتے ہوئے جلد تاریخ کی درخواست کی کہ ملک کے دیگر حصوں میں بھی اسی طرح کے اجلاسوں کا اعلان کیا جاتا ہے۔ سبل نے کہا کہ علی گڑھ میں 23 جنوری کو ایک دھرم سنسد منعقد ہونے والی تھی اور اس معاملے کو اگلے پیر کو پیش کرنے کی درخواست کی۔ اس معاملے کو 10 دن کے بعد پوسٹ کرتے ہوئے، بنچ نے کہا کہ عرضی گزار دوسرے حصوں میں مجوزہ اسی طرح کی میٹنگوں کے بارے میں مقامی حکام کو نمائندگی دینے کے لیے آزاد ہوں گے۔

سی جے آئی نے کہاکہ "ہم درخواست گزاروں کو ان واقعات کے بارے میں متعلقہ حکام کی توجہ دلانے کی اجازت دیں گے جو ہونے والے ہیں، جو ان کے مطابق قانون کی دفعات اور اس عدالت کے فیصلے کے خلاف ہیں۔

سبل نے سماعت کے دوران کہا کہ اگر فوری اقدامات نہ اٹھائے گئے تو یہ دھرم سنسد دوسری جگہوں پر ہوں گی۔ یہ ان ریاستوں میں ہونے والی ہیں جہاں انتخابات کا عمل جاری ہے، کوئی گرفتاری نہیں ہوئی ہے، ملک کا ماحول خراب ہو جائے گا، یہ اس کے برعکس ہے۔ جمہوریہ کا مطلب ہے، اس کی اخلاقیات اور اقدار کو ہم پسند کرتے ہیں۔ یہ تشدد کے لیے واضح اکسانا ہے-

بنچ نے پوچھا کہ کیا اسی طرح کے دیگر معاملات پر جسٹس کھانولکر کی قیادت والی ایک مختلف بنچ کے ذریعہ غور کیا جا رہا ہے۔ سبل نے جواب دیا کہ یہ نفرت انگیز تقاریر کے خلاف عمومی ہدایات مانگنے والی درخواستیں تھیں اور یہ کیس خاص طور پر دھرم سنسد کے معاملے سے نمٹ رہا تھا۔ ہدایت دینے والے وکیل، ایڈوکیٹ شادان فراسات نے بنچ کو بتایا کہ جسٹس کھانویلکر کی بنچ نے ان مقدمات کو چیف جسٹس کی قیادت والی بنچ کو بھیج دیا ہے۔

سینئر ایڈوکیٹ اندرا جے سنگھ نے مہاتما گاندھی کے پڑپوتے تشار گاندھی کی جانب سے یہ کہتے ہوئے مداخلت کی درخواست کی کہ سپریم کورٹ نے 2019 میں ان کی درخواست میں ہجومی تشدد کے خلاف ہدایات جاری کی تھیں۔

اگر ان ہدایات پر عمل کیا جاتا تو یہ دھرم سنسد نہ ہوتی"، جے سنگھ نے عرض کیا۔ بنچ نے کہا کہ وہ اس وقت صرف اہم عرضی پر غور کر رہی ہے۔سینئر ایڈوکیٹ کپل سبل کے ذریعہ 10 جنوری کو فوری فہرست طلب کیے جانے کے بعد آج یہ معاملہ اٹھایا گیا جنہوں نے عرضی گزاروں کی جانب سے اس معاملے کا ذکر کیا تھا